بتا اے ابر مساوات کیوں نہیں کرتا Urdu Ghazal Tehzeeb Hafi

Spread the love

بتا اے ابر مساوات کیوں نہیں کرتا Urdu Ghazal Tehzeeb Hafi

Bta aay abr masavat kyun nahi krta
Humary gauon ma barsat kyun nahi krta
 
Mahaz e Ishq cy kb kn bach ky nikla hai
Tu bach gya hai toh kherat kyun nahi krta
 
Wo js ki chaoun ma paches saal guzray hain
Wo perh mujh cy koi bat kyun nahi krta
Main js ky sath kae din guzar aya hun
Wo mery sath basar rat kyun nahi krta
Mujhy toh jan cy barh kr aziz ho gya hai
Tu mery sath koi baat kyun nahi krta
بتا اے ابر مساوات کیوں نہیں کرتا Urdu Ghazal Tehzeeb Hafi
بتا آئے ابر ماساvات کیوں نہیں کرتا
ہمارے گاؤں ماں برسات کیوں نہیں کرت
امحاذ عشق کی کب كن بچ کے نکلا ہے
تو بچ گیا ہے تو خیرات کیوں نہیں کرتاوہ جس کی چھاؤں ماں پاچیس سال گزرے ہیں
وہ پڑھ مجھ کی کوئی بیٹ کیوں نہیں کرتامیں جس کے ساتھ کائی دن گزر آیا ہوں
وہ میرے ساتھ بسر رات کیوں نہیں کرتا

مجھے تو جان کی بڑھ کر عزیز ہو گیا ہے
تو میرے ساتھ کوئی بات کیوں نہیں کرتا