خوابوں کو آنکھوں سے منہا کرتی ہے Urdu Ghazal Tehzeeb Hafi

Spread the love

خوابوں کو آنکھوں سے منہا کرتی ہے Urdu Ghazal Tehzeeb Hafi

Khawabon ko ankhon cy minha krti hai
Neend hamesha mujh cy dokha krti hai
Soch raha hn ishq dubarah kr ln mai
Waisy bhi toh sari dunya krti hai
 
Barish mery rab ki esi namat hai
Ronay ma asani paida krti hai
 
Us larki sy bus ab itna rishta hai
Mil jaye toh bat wagera krti hai
Main uski khusboo orha krta hn
Wo meri awazian pehna krti hai
Such pucho toh hafi yeh tanhai bhi
Jeeny ka saman muheiya krti hai
خوابوں کو آنکھوں کی منحہ کرتی ہے نیند ہمیشہ مجھ کی دوکھا کرتی ہے سوچ رہا ہوں عشق دوباراح کر ان میں ویسے بھی تو ساری دنیا کرتی ہے بارش میرے رب کی ایسی نعمت ہے رونے ماں آسانی پیدا کرتی ہے اس لڑکی سے بس اب اتنا رشتہ ہے مل جائے تو بیٹ وغیرہ کرتی ہے میں اسکی خوشبو اوڑھا کرتا ہوں وہ میری اوازیان پہنا کرتی ہے سچ پوچھو تو حافی یہ تنہائی بھی جینی کا سامان موحییا کرتی ہے
خوابوں کو آنکھوں کی منحہ کرتی ہے
نیند ہمیشہ مجھ کی دوکھا کرتی ہےسوچ رہا ہوں عشق دوباراح کر ان میں
ویسے بھی تو ساری دنیا کرتی ہےبارش میرے رب کی ایسی نعمت ہے
رونے ماں آسانی پیدا کرتی ہے

اس لڑکی سے بس اب اتنا رشتہ ہے
مل جائے تو بیٹ وغیرہ کرتی ہے

میں اسکی خوشبو اوڑھا کرتا ہوں
وہ میری اوازیان پہنا کرتی ہے

سچ پوچھو تو حافی یہ تنہائی بھی
جینی کا سامان موحییا کرتی ہے