Khayal main bhi use be rida nahi kiya hai علی زریون Urdu Ghazal 2022

Spread the love
Yeh zulm mujh cy nahi ho saka nahi kiya hai
Khayal main bhi use be rida nahi kiya hai
Main aik shaks ko iman janta hun toh kya
Logon ny khuda ky naam pay kya nahi kiya hai
Esi liye toh roya nahi bicharty samy
Tujhy rawana kiya hai juda nahi kiya hai
Yeh badtamez tujh cy dar rahy hain toh phr
Tujhy bigar k main ny bura nahi kiya hai
Khayal main bhi use be rida nahi kiya hai علی زریون Urdu Ghazal 2022
یہ ظلم مجھ کی نہیں ہو سکا نہیں کیا ہے
خیال میں بھی یوز بے ردا نہیں کیا ہےمیں ایک شخص کو ایمان جانتا ہوں تو کیا
لوگوں نے خدا کے نام پے کیا نہیں کیا ہےایسی لیے تو رویا نہیں بچھڑتے سامی
تجھے روانہ کیا ہے جدا نہیں کیا ہے

یہ بدتمیز تجھ کی دَر رہے ہیں تو پھر
تجھے بگڑ کے میں نے برا نہیں کیا ہے